استاد ایک ایسی  ہستی ہے جو حقیقت میں انسانوں کی تقدیر بنانے اور سنوارنے میں ہر وقت کوشش میں رہتا ہے  جب میں پانچویں کلاس میں تھا تو استاد صاحب نے ایک دن نعت پڑھاتے ہوئے بتایا کہ حضرت محمد ﷺ کی پوری زندگی معجزات سے معمور ہے لیکن دو باتیں جو پیغمبر ﷺ میں ایسی تھیں کہ آج ان کا پیغام کروڑوں نہیں اربوں تک پہنچ چکا ہے اور قیامت تک جاری رہے گا۔ایک بات تو ان کا پیغام “سچا ” تھااور اللہ کا پیغام تھا, دوسری بات پیغمبر ﷺنے پوری “ایمانداری ” سے اللہ کا پیغام لوگوں تک پہنچایا ۔ استاد صاحب کی باتیں اس قدر پر اثر تھیں کہ پوری کلاس پر خاموشی طاری ہو گئی تھی اور بات کا نوں سے گزر کر دل میں اتر رہی تھی ۔سبق تو پورا ہو گیا ،دن گزرتے رہےاور ایک دن ایسا ہوا کہ جیسے ہی میں صبح صبح سکول گیٹ سے داخل ہوا تو مجھے فرش پر گرے ہوئے پورے سات سوروپے ملے۔میں نے اپنے ہاتھ میں اتنے سارے پیسے پہلی بار دیکھے تھے ۔میں تربیلا چک کے پاس جھگیوں میں رہتا ہوں اور میرا والد ٹانگوں سے معذورتھا اور گدھا ریڑھی پر “صدا” لگاتاتھا۔اور میں بھی کبھی کبھی اپنے والد کے ساتھ چلا جاتا تھا لیکن اتنے پیسے پورے دن میں بھی نہیں بنتے تھے ۔سو روپے یا دو سو روپے بنتے جو گھر میں خرچ ہو جاتے ۔جب سے یہ نئے استاد صاحب آئے ہیں اس قدر شوق اور محبت سے پڑھاتے ہیں کہ میں نے اپنے والد صاحب کے ساتھ “صدا”لگاناچھوڑ دی ہے اور بلاناغہ سکول آتا ہوں اب میرا شوق محنت کر کے پڑھائی کرنا ہے۔آج اتنے سارے پیسے دیکھ کر میرے دل میں کئی کئی خیالات پیدا ہو نے لگے  تھے۔لیکن میرےکانوں میں استاد صاحب کے وہ الفاط بار بار گونجنے لگے کہ پیغمبر ﷺ “سچے” اور “ایماندار” تھے ہمارے پیغمبر ﷺ نے کبھی جھوٹ نہیں بولا ۔
یہ الفاظ میرے کانو ں میں باربار گونجتے رہے۔میں وہیں سکول  کےگراؤنڈ  میں رک گیا اور استاد صاحب کے آنے کا انتظار کرنے لگا ۔استاد صاحب جیسے ہی سکول پہنچے میں نے سارا ماجرا استاد صاحب کو سنایا ۔استاد صاحب نےوہ پیسے مجھ سے لے لیے ۔سکول میں اس بندے کو تلاش کیا گیا جس کے پیسے تھے اور اس کو واپس دے دیے گئے ۔استاد صاحب میرے اس کام سے نا صرف خوش ہوئے بلکہ مجھے بہت سی دعائیں دیں اور نصیحت کی کہ بیٹا !اسی طرح اپنی زندگی سچائی اور ایمانداری سے گزارو گے تو زندگی میں کبھی ناکامی کا سامنا نہیں کروگے ۔الحمداللہ آج میں ساتویں کلاس میں پڑھ رہا ہوں اور شام کو استاد صاحب کے مشورے سے کام بھی سیکھ رہا ہوں ۔انشاءاللہ میں محنت مزدوری کر کےاپنی تعلیم پوری کروں گا اور اپنے استاد صاحب جیسا بنوں گا۔

شیئر کریں
  •  
  •  
  •  
  •  
  •