مریم بی بی (لودھراں)

اللہ تعالیٰ نے جہاں انسان کو بہت سی نعمتیں یعنی ہوا، پانی اور دھوپ وغیرہ عطا کی ہیں، وہاں اس نے مجھے بھی آپ کی خدمت پر مامور کیا ہے۔ لوگ مجھے بے جان سمجھتے ہیں لیکن ایسا ہر گز نہیں ہے۔ میں نہ صرف جان دار ہوں اور سانس لیتا ہوں بلکہ میں سانس لینے میں بھی آپ کی خدمت کرتا ہوں۔ میں آلودہ ہوا جذب کرکے آپ لوگوں کے لیے تازہ اور صاف ہوا کا انتظام کرتا ہوں۔
یقیناً آپ نے مجھے پہچان لیا ہو گا۔ جی ہاں! میں درخت ہوں۔ میں اللہ تعالیٰ کی قدرت کا شاہکار ہوں۔ ذرا سوچیں اور غور کریں کہ کس طرح ایک ننھے سے بیج سے میری پیدائش ہوتی ہے۔ یہ ٹھیک ہے کہ میں دیگر جان داروں مثلاً گائے، بکری اور اونٹ وغیرہ کی طرح دوڑتا بھاگتا نہیں ہوں لیکن اس کا یہ مطلب بھی نہیں ہے کہ میں بالکل ہی نکما اور بے کار ہوں۔ میں گرمی کے موسم میں آپ کے لیے چھاؤں کا انتظام کرتا ہوں، میں آپ کے لئے ہر قسم کے پھل اور میوے لاتا ہوں جو کہ خوش ذائقہ اور صحت بخش ہوتے ہیں۔
اچھا ! ذرا یہ تو بتائیں کہ آپ کے گھروں میں جو کرسیاں ، میزیں ، دروازے اور کھڑکیاں ہوتی ہیں، یہ کس چیز سے بنتی ہیں؟ جی! یہ بھی میری ہی لکڑی سے بنتی ہیں۔ میری لکڑی سے آپ کی ضرورت کی کئی اشیاء بنتی ہیں ۔ اس کے علاوہ گاؤں اور دیہات میں جہاں گیس وغیرہ نہیں ہوتی وہاں میری لکڑی کو ایندھن کے طورپر استعمال کیا جاتا ہے ۔میری ہی وجہ سے زمین پر خوبصورتی اور ہریالی نظر آتی ہے۔ جس شہر اورگاؤں میں میری کثرت ہوتی ہے وہاں کا ماحول خوش گوار اور معتدل رہتا ہے ۔

شیئر کریں
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
1305
17